جعلی اکاﺅنٹس کیس‘سابق سربراہ سندھ بنک ندیم الطاف

جعلی اکاﺅنٹس کیس‘سابق سربراہ سندھ بنک ندیم الطاف وعدہ معاف گواہ بن گئے، اقبالی بیان ریکارڈ

جعلی بینک اکاﺅنٹس کیس میں بوگس کمپنیوں کو قرض دینے کی انکوائری میں اہم پیش رفت ہوئی ہے۔ کرفتار سندھ بینک کے سابق صدر ندیم الطاف وعدہ معاف گواہ بن گئے۔

ملزم ندیم الطاف نے اومنی گروپ کی جعلی کمپنیوں کو ایک ارب روپے قرض دے کر خوردبرد کا اعتراف کرلیا۔ مجسٹریٹ نے ملزم کا اقبالی بیان ریکارڈ کر لیا ہے ۔ ملزم نے اپنے اقبالی بیان میں بتایا کہ اس نے سیاسی دباﺅ کی وجہ سے اومنی گروپ کی جعلی کمپنیوں کوایک ارب روپے سے زائد کا قرض دلوایا اوراس حوالہ سے دیگر افسران بھی اس کے ساتھ ملوث تھے ۔

جبکہ چیئرمین نیب جسٹس (ر)جاوید اقبال نے ملزم کے وعدہ معاف گواہ بننے کی درخواست منظور کر لی ہے۔ ندیم الطاف نے کہا ہے کہ وہ نیب کے ساتھ مکمل تعاون کرنے اور حقائق بتانے کے لیے تیار ہیں۔ نیب نے ملزم کا جسمانی ریمانڈ مکمل ہونے پر بدھ کے روز اسلام آباد کی احتساب عدالت کے جج محمد بشیر کی عدالت میں پیش کیا۔ نیب نے عدالت سے استدعا کی ہے ملزم کو رہا کر دیا جائے۔ عدالت نے نیب کی استدعا پر فیصلہ محفوظ کر لیا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں