ڈیوٹی فری 56

پاکستان نے چین کو ڈیوٹی فری رسائی دینے کا مطالبہ مسترد کردیا، چین کو صرف کچھ اشیاءپر ڈیوٹی فری رسائی

اسلام آباد (این این آئی) وزیر اعظم کے مشیر برائے تجارت عبد الرزاق داﺅد نے کہا ہے کہ پاکستان نے چین کو ڈیوٹی فری رسائی دینے کا مطالبہ مسترد کردیا، چین کو صرف کچھ اشیاءپر ڈیوٹی فری رسائی دیں گے، چین پاکستان کو 313اشیاءپر ڈیوٹی فری رسائی دےگا، پاکستان اور چین کے درمیان آزاد تجارتی معاہدہ دوئم پر 28اپریل کو دستخط ہوں گے، ترکی پاکستانی مصنوعات کے لئے کوئی رعایت دینے کو تیار نہیں ہے،سمگلنگ کی حوصلہ شکنی کے لئے قوانین میں تبدیلی کرنے جارہے ہیں ، ہمیں بنگلہ دیش کی چمڑے کے مصنوعات سے سخت مقابلہ کرنے پڑےگا، پاکستان میں پنسل اور سٹیشنری کی صنعت کو افغان درآمدات سے نقصان پہنچا۔

منگل کو سید نوید قمر کی زیر صدارت قومی اسمبلی کی قائمہ کمیٹی برائے تجارت کا اجلاس ہواجس میں مشیر تجارت عبد الرزاق داو¿د نے بریفنگ دیتے ہوئے بتایاکہ پاکستان نے چین کو ڈیوٹی فری رسائی دینے کا مطالبہ مسترد کردیا۔مشیر تجارت نے کہاکہ چین کو صرف کچھ اشیاءپر ڈیوٹی فری رسائی دیں گے۔ عبد الرزاق داﺅد نے کہاکہ چین نے پاکستان کو ڈیوٹی فری رسائی دینے کے بدلے ڈیوٹی فری رسائی مانگی۔انہوںنے کہاکہ چین آسیان کی طرز پر پاکستان کو ڈیوٹی فری رسائی دینے پر آمادہ ہوگیا۔انہوںنے کہاکہ چین پاکستان کو 313اشیاءپر ڈیوٹی فری رسائی دےگا۔انہوںنے کہاکہ پاکستان اور چین کے درمیان آزاد تجارتی معاہدہ دوئم پر 28اپریل کو دستخط ہوں گے۔انہوںنے کہاکہ چین پہلے پاکستان کو ڈیوٹی فری رسائی دینے پر آمادہ نہیں تھا۔

انہوںنے کہاکہ پاکستان کو فری رسائی دینے کے متعلق معاملہ چین کی اندرونی سیاست کی نظر ہوگیا تھا۔انہوںنے کہاکہ چینی سفیر نے بتایا کہ وزیر تجارت پاکستان کو فری رسائی دینے پر رضامند نہیں تھے۔انہوںنے کہاکہ سفیر نے بتایا کہ چین کے وزیر اعظم اور وزیر خارجہ فری رسائی دینے پر آمادہ تھے۔

انہوںنے کہاکہ چین کو کہا کہ آپ کہتے ہو آپ ہمارے دوست ہو تو آسیان کی طرز پر رعایت دیں۔انہوںنے کہاکہ ترکی کو پاکستانی ٹیکسٹائل مصنوعات کی برآمد میں مشکلات کا سامنا ہے ۔انہوںنے کہاکہ ترکی پاکستانی مصنوعات کے لئے کوئی رعایت دینے کو تیار نہیں ہے ۔انہوںنے کہاکہ ترکی پاکستان کو ٹیکسٹائل اور لیدر مصنوعات کی برآمد میں رعایت دینے کو تیار نہیں ہے ۔انہوںنے کہاکہ ترکی کی جانب سے ہماری مصنوعات پر 27 فیصد ڈیوٹی لگا دی گئی ہے ۔انہوںنے کہاکہ اگر کسی نے دبئی سے درآمدات کیں تو یہ دیکھیں گے کہ اس نے مال کہاں سے خریدا ۔انہوںنے کہاکہ سمگلنگ کی حوصلہ شکنی کے لئے قوانین میں تبدیلی کرنے جارہے ہیں ۔

انہوںنے کہاکہ بنگلہ دیش ہمارے سے آگے اس لئے نکل گیا انکو دنیا بھر میں ڈیوٹی فری مارکیٹ رسائی ہے۔انہوںنے کہاکہ بنگلہ دیش کی چمڑے کی مصنوعات کی درآمدات بھی ایک ارب ڈالر سے زائد ہو گئی ۔انہوںنے کہاکہ ہمیں بنگلہ دیش کی چمڑے کے مصنوعات سے سخت مقابلہ کرنے پڑےگا،بنگلہ دیشی محنتی قوم ہے۔انہوںنے کہاکہ پاکستان میں چینی کپڑا دبئی سے آرہا ہے۔انہوںنے کہاکہ چینی کپڑے سے پاکستانی صنعت متاثر ہوئی۔

انہوںنے کہاکہ دبئی سے کپڑے کی درآمد پر پابندی عائد کریں گے۔ انہوںنے کہاکہ چین سے اصل وقت میں برآمدات کا ڈیٹا فراہم کرنے کی درخواست کی ہے۔ انہوںنے کہاکہ الیکٹرانک ڈیٹا ملنے سے ٹیکس چوری روکنے میں مدد ملے گی۔ انہوںنے کہاکہ پاکستان میں تیار ہونے والی جینز اور ڈینم کا معیار بہت بہتر ہے۔مشیر تجارت عبدالرازق داو¿د نے کہاکہ افغان ٹرانزٹ ٹریڈ نے پاکستان کی صنعتی ترقی کو بہت متاثر کیا۔ انہوںنے کہاکہ افغان وہ تمام چیزیں درآمد کرتے ہیں جو پاکستان میں تیار ہوتی ہیں۔

انہوںنے کہاکہ پاکستان میں پنسل اور سٹیشنری کی صنعت کو افغان درآمدات سے نقصان پہنچا۔انہوںنے کہاکہ چاول کی برآمدات بڑھ رہی ہیں

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں