گیندوں کا تجربہ

پی سی بی کابرطانیہ سے درآمد کی گئی گیندوں کا تجربہ ناکام

لاہور(آئی این پی)پاکستان کرکٹ بورڈ نے برطانیہ سے درآمد کی گئی گیندوں کے ناکام تجربے کے بعد نئے ڈومیسٹک سیزن میں ایک بار پھر آسٹریلوی گیندیں استعمال کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔پی سی بی ذرائع کا کہنا ہے کہ آسٹریلیا کی مشہور کوکوبرا کمپنی کی گیندیں فرسٹ کلاس، ون ڈے اور ٹی 20میچوں کے دوران استعمال کی جائیں گی۔ذرائع کے مطابق دو سال سے پی سی بی نے انگلینڈ کی ڈیوک گیندوں کا استعمال کیا تھا جبکہ ون ڈے اور ٹی 20میں کوکوبرا گیندیں استعمال ہوتی تھیں۔ لیکن اس سال پی سی بی نے ریڈ اور وائٹ بال کرکٹ میں بھی آسٹریلوی گیندیں استعمال کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔اس سال پی سی بی نے یہ فیصلہ اس لئے کیا ہے کیوں کہ انٹر نیشنل کرکٹ میں ہر جگہ کوکوبرا کی گیندیں استعمال ہوتی ہیں۔ذرائع کا کہنا ہے کہ فرسٹ کلاس ٹورنامنٹ قائد اعظم ٹرافی میں لال رنگ والی کوکوبرا گیندیں استعمال ہوں گی۔

اسی طرح ون ڈے اور ٹی 20 ٹورنامنٹ میں سفید رنگ کی آسٹریلوی گیندیں استعمال ہوں گی۔پاکستان کرکٹ بورڈ نے ڈومیسٹک کرکٹ کا نیا ڈھانچہ تیار کر لیا ہے جس پر عمل درآمد کے لئے تیاریاں مکمل ہیں۔ذرائع کا کہنا ہے کہ آئی سی سی ٹیسٹ چیمپئن شپ، ایشیا کپ ٹی 20 اور ٹی 20 ورلڈ کپ میں آسٹریلوی گیندیں استعمال ہوں گی، اس لئے پی سی بی انتظامیہ نے بھی اسی کوالٹی کی گیندیں استعمال کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔پی سی بی نے نئے فرسٹ کلاس سیٹ اپ میں پچوں کی کوالٹی کو خاص اہمیت دی ہیکیوں کہ ماضی میں غیر ملکی گیندوں کے ساتھ پچز کی کوالٹی زیادہ اچھی نہیں ہوتی تھی۔ یہ بھی شکایات ملتی رہی ہیں کہ ماضی میں بیرون ملک سے ایسی گیندیں منگوائی جاتی تھیں جو غیر معیاری ہوتی تھیں۔اس بار پی سی بی چیئرمین احسان مانی نے ایم ڈی وسیم خان کو خاص ہدایت کی ہے کہ ڈومیسٹک کرکٹ میں شکایات کو دور کیا جائے اور گیندوں و پچوں کی کوالٹی پر کوئی سمجھوتہ نہ کیا جائے۔ فرسٹ کلاس، ون ڈے اور ٹی 20 میں صوبائی ٹیمیں شرکت کریں گی۔ڈپارٹمنٹل اور ریجنل ٹیموں کو ختم کردیا جائے گا۔ ڈپارٹمنٹس صوبائی ٹیموں کو اسپانسر کریں گے جبکہ عملی طور پر ڈپارٹمنٹل ٹیموں کا کردار ختم کردیا جائے گا۔پی سی بی نے ڈپارٹمنٹس کو بتایا گیا ہے کہ اگلے سیزن میں ان کی کوئی ٹیم کسی بھی ٹورنامنٹ میں شرکت نہیں کرے گی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں