چین کے ارضیاتی تحقیقاتی جہاز کی ہائیڈروکاربن کی دریافت کیلئے کراچی آمد

اسلام آباد: چین کے ارضیاتی تحقیقاتی جہاز ‘ہائی یانگ ڈی شو ہاو’ نے پاکستان کی ارضیاتی نقشہ کشی اور ہائیڈرو کاربن کی دریافت کے سلسلے میں پاکستان بحریہ کی زیر نگرانی کراچی کا دورہ کیا۔

پاک بحریہ کے شعبہ تعلقات عامہ کی جانب سے جاری بیان کے مطابق چین کے ارضیاتی تحقیقاتی جہاز کی اس مہم کا دورانیہ 18 دسمبر سے 19 فروری تک رہا۔

مہم کے دوران چین کے ارضیاتی تحقیقاتی جہاز نے پاکستان کی سمندری حدود میں مختلف ارضیاتی تبدیلیوں پر تحقیق کا آغاز کیا۔

چینی سائنسدانوں کے ساتھ نیشنل انسٹی ٹیوٹ آف اوشنوگرافی اور پاکستان بحریہ کے ماہرین نے بھی حصہ لیا۔

بحری تحقیق کے میدان میں یہ تعاون مستقبل میں بھی جاری رہے گا — فوٹو: پاک بحریہ
بحری تحقیق کے میدان میں یہ تعاون مستقبل میں بھی جاری رہے گا — فوٹو: پاک بحریہ

بیان میں کہا گیا کہ حاصل شدہ معلومات پر دونوں ممالک کے سائنسدان مشترکہ تحقیقات کریں گے۔

یہ مہم ارضیاتی نقشہ کشی اور سمندر میں رونما ہونے والی تبدیلیوں پر تحقیق کے حوالے سے پاکستان اور چین کے درمیان بڑھتے ہوئے اشتراک کا مظہر ہے۔

بحری تحقیق کے میدان میں یہ تعاون مستقبل میں بھی جاری رہے گا اور مستقبل قریب میں چین کے ارضیاتی تحقیقاتی جہاز کی مزید تحقیقی سرگرمیوں کی منصوبہ بندی کی گئی ہے اور امید کی جا رہی ہے کہ یہ مہم پاکستان کے سمندری حدود میں وسائل کے حصول میں مددگار ثابت ہوگی۔

واضح رہے کہ چین کے ارضیاتی تحقیقاتی جہاز کے دورے کا فیصلہ گزشتہ برس چیف آف نیول اسٹاف ایڈمرل ظفر محمود عباسی کی چین کے ارضیاتی سروے کے نائب وزیر ڈاکٹر زونگ زیران سے بیجنگ میں ملاقات کے بعد کیا گیا تھا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں