صدر مملکت

ہم پر جنگ مسلط کی گئی تو دنیا اس کے اثرات محسوس کرے گی: صدر مملکت

اسلام آباد (صباح نیوز) صدر مملکت عارف علوی نے کہا ہے کہ ہماری امن پسندی کو بھارت کمزوری نہ سمجھے لہذا ہم پر جنگ مسلط کی گئی تو دو ملکوں کی جنگ نہیں رہے گی بلکہ خطہ اور دنیا اس کے اثرات محسوس کرے گی۔

کنونشن سینٹر اسلام آباد میں یومِ آزادی کے موقع پر پرچم کشائی کی مرکزی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے صدر عارف علوی نے کہا کہ آج ان عظیم شخصیات سے یوم تشکر کا دن بھی ہے جن کی بدولت آج ہم آزاد فضا میں سانس لے رہے ہیں.

آج کا یوم آزادی یوم یکجہتی کشمیر بھی ہے، ہم ہمیشہ کشمیریوں کے ساتھ تھے، ساتھ ہیں اور انشا اللہ ہمیشہ ساتھ رہیں گے۔

انہوں نے کہا کہ دنیا دیکھ رہی ہے قوم کشمیری بھائیوں کے ساتھ کھڑی ہے، ہم اس وقت تک ان کی سیاسی، اخلاقی اور سفارتی مدد کریں گے جب تک انہیں حق خودارادیت نہیں ملتا، ہم انہیں تنہا نہیں چھوڑیں گے.

کشمیری ہمارے اور ہم ان کے ہیں، ان کا دکھ ہمارا دکھ ہے اور ان کی آنکھ سے بہنے والا آنسو ہمارے دل میں گرتا ہے۔

صدر مملکت کا کہنا تھا کہ مقبوضہ کشمیر پر بھارت کے حالیہ غیر قانونی اور یکطرفہ اقدام کے سلسلے میں پارلیمان نے مذمتی قرارداد بھی منظور کی ہے، ہم بھارت کی طرف سے مقبوضہ کشمیر کی متنازع حیثیت کی تبدیلی کو قبول نہیں کرتے، بھارت غیر قانونی اقدمات سے کشمیر کی متنازع حیثیت کو تبدیل نہیں کرسکتا.

بھارت نے اپنے یکطرفہ اقدام سے نہ صرف اقوام متحدہ کی قراردادوں کی خلاف ورزی کی بلکہ شملہ معاہدے کو بھی ردی کی ٹوکری میں پھینک دیا ہے۔صدر عارف علوی نے کہا کہ بھارت کی جانب سے اٹھایا جانے والا حالیہ اقدام سلامتی کونسل میں لے جانے کا فیصلہ کرلیا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ بھارت نے کشمیر سے متعلق تمام عالمی قرار دادوں کی مخالفت کی اور بھارت نے شملہ معاہدے کی تمام شقوں کی بھی مخالفت کی جبکہ بھارت نے نہرو کے وعدوں پر بھی پانی پھیر دیا۔انہوں نے مزید کہا کہ بھارت نہ بھولے کہ کشمیر کے تین فریق ہیں، پاکستان، بھارت اور کشمیری عوام، ہم کشمیر کا پرامن حل چاہتے ہیں.

اپنا تبصرہ بھیجیں