سید حسین جہانیاں گردیزی

وزیر زراعت پنجاب سید حسین جہانیاں گردیزی کا بادامی باغ فروٹ منڈی کا دورہ

لاہور (لاہورنامہ) کاشتکاروں کو اُن کی محنت کا معقول معاوضہ دلانے کے لئے زرعی منڈیوں کے نظام میں اصلاحات کی جا رہی ہیں۔ان اصلاحات سے منڈی کے تمام اسٹیک ہولڈرز مستفید ہوں گے اور منڈیوں کے مسائل میں کمی آئے گی۔

اس ضمن میں صوبہ میں 132 زرعی منڈیوں کو آپس میں لنک کیا جا رہا ہے ان خیالات کا اظہار صوبائی وزیر زراعت پنجاب سید حسین جہانیاں گردیزی نے بادامی باغ فروٹ منڈی کے دورہ کے موقع پر کیا۔

صوبائی وزیر زراعت نے مزید کہا کہ صوبہ بھر میں 105 زرعی منڈیوں میں کسان پلیٹ فارم کا قیام عمل میں لایا گیا ہے جہاں کسان براہ راست اشیاء فروخت کر رہے ہیں۔ اس کے علاوہ اینڈرائیڈ ایپلکیشن” منڈی ایپ” کے ذریعے مارکیٹ فیس وصولی کا ریکارڈ مرتب کیا جا رہا ہے تاکہ مڈل مین کا کردار محدود کیا جا سکے اور کاشتکاروں کو اُن کی محنت کا پورا معاوضہ مل سکے۔

منڈیوں میں مارکیٹ فیس کا شیڈول،کمیشن اور روزانہ کے نرخ واضح جگہوں پر آویزاں جا رہے ہیں۔ پامرا ایکٹ کے نافذ العمل ہونے کے بعدزرعی منڈیوں کے نظام کو جدید خطوط پر استوار کیا جا رہا ہے جس سے تمام اسٹیک ہولڈرز مستفید ہوں گے۔

لکھوڈیرہ میں 5 ارب روپے کی خطیر رقم سے براعظم ایشیاء کی ماڈل منڈی کی تعمیر کاکام جاری ہے جس میں جدید مشینری کی مدد سے پراسیسنگ کے انتظامات کئے جارہے ہیں۔بین الاقوامی معیار سے ہم آہنگ اس ماڈل منڈی میں مال سلیکشن کا کام جدیدسکینرز کی مدد سے کیا جائے گا اور یہ منڈی کسانوں کیلئے ایک بہتر ین منڈی ثابت ہوگی۔

اس کے علاوہ صوبہ بھر میں ماڈل منڈیوں میں صفائی ستھرائی کے معیاری انتظامات مکمل انتظامات کئے گئے ہیں اورروزانہ کے آکشن کی بنیاد پر نرخ وضع کئے جارہے ہیں۔

صوبائی وزیر زراعت کے اس دورہ کے موقع پر ڈائریکٹر جنرل پامرا محسن شاکر، چئیرمین بادامی باغ منڈی ملک ندیم اسحاق،صدر بادامی باغ منڈی قیصر سجاد بھٹی اور نائب صدر چوہدری ارسلان ظہیر و دیگرہمراہ تھے۔اس موقع پر صوبائی وزیر زراعت پنجاب سید حسین جہانیاں گردیزی نے منڈی کی نو منتخب یونین سے حلف لیا۔