ڈاکٹر فردوس عاشق

نون لیگ آمریت کی پیداوار،ہار برداشت کرنے کا حوصلہ نہیں، ڈاکٹر فردوس عاشق

لاہور (لاہور نامہ)معاون خصوصی وزیر اعلی ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان نے کہا ہے کہ ن لیگ آمریت کی پیداوار ہے ان میں ہار برداشت کرنے کا حوصلہ نہیں،جس جگہ سے وہ جیتے ہیں اس جگہ الیکشن شفاف جبکہ جہاں سے وہ الیکشن ہارتے ہیں تو دھاندلی کا واویلہ کرتے دکھائی دیتے ہیں –

ڈسکہ NA75 ضمنی الیکشن میں ”مسلح ن لیگ” کے سوچے سمجھے فائرنگ منصوبے کے بعد جعلساز راجکماری عقل کی اندھی کنیزوں اور چیلوں کے جھرمٹ میں اپنی ہی فائرنگ سے جاں بحق نوجوان کے لواحقین سے تعزیت کے نام پر سانڈ سسٹم، گانوں، لطیفوں اور تالیوں سے انکے زخموں پر نمک پاشی کرتی رہی۔

ڈسکہ کے الیکشن نے واقعی پورے ملک کے عوام پر نون لیگ کی بدمعاشی اور طاقت کے استعمال سے انتخابی عمل کو ہائی جیک کرنے کے روایتی ہتھکنڈے کی قلعی کھول دی ہے۔راجکماری نے سب کو بتا دیا کہ وہ وہ 35 سالوں سے کس طرح ڈسکہ جیسی بدمعاشی، غنڈہ گردی، جعل سازی اور حکومتی مشینری میں موجود اپنے گھس بیٹھیوں کی مدد سے جیتتے آئے تھے-

اس موقع پروفاقی وزیراطلاعات و نشریات شبلی فراز،وفاقی وزیر سائنس و ٹیکنالوجی فواد چودھری،رہنما پاکستان تحریک انصاف عثمان ڈار اور علی اسجد ملہی بھی موجود تھے۔ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان نے کہا کہ جعلی راج کماری نے نوشہرہ میں گھس کر مارنے کی بات کرکے نواز شریف خاندان کی مودی سے پرانی محبت اور عقیدت کا پھر اظہار کردیا ہے-

مودی پاکستان کو اندر گھس کر مارنے کی دھمکیاں دیا کرتا تھا جبکہ یہ کبھی نوشہرہ میں گھس کر مارنے کی اور کبھی کسی ادارے کو گھس کر مارنے کی دھمکی دیتی ہے،اسی غلیظ اور اور نفرت انگیز بیانیہ کی وجہ سے راجکماری، اس کے ابا جی اور ان کی پارٹی ہمیشہ ہمیشہ کے لئے پاکستانیوں کی نظروں سے گر چکی ہے-

صوبائی وزیر چوہدری محمد اخلاق،عمر ڈار،چودھری ممتاز احمد اور عظیم نوری گھمن بھی اس موقع پر موجود تھے۔بعدازاں وفاقی وزیراطلاعات و نشریات شبلی فراز،وفاقی وزیر سائنس و ٹیکنالوجی فواد چودھری،معاون خصوصی وزیر اعلی فردوس عاشق،رہنما پاکستان تحریک انصاف عثمان ڈار اور صوبائی وزیر اسپیشل ایجوکیشن پنجاب چودھری محمد اخلاق و دیگر ڈسکہ میں 19فروری کو ہونے والے الیکشن کے دوران فائرنگ سے جاں بحق ہونے والے لواحقین کے ساتھ اظہار تعزیت کیلئے ان کے گاں گوئندکے پہنچے۔

اس موقع پرمعاون خصوصی و دیگر نے الیکشن کے دوران فائرنگ سے جان بحق ہونے والے پی ٹی آئی کے شہید کارکن ماجد مہر اور زخمی ہونے والے ساجد مہر اور قمر مہر کے گھر شہید کارکن کے ایصال ثواب کیلئے دعا کی۔ رہنماں نے فائرنگ سے زخمی ہونے والے پی ٹی آئی کے کارکن ساجد مہر اور قمر مہر کی عیادت کی اور جلد صحت یابی کیلئے دعا کی۔

ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان نے کہا کہ شہید کے لواحقین کو ہر طرح کی قانونی معاونت کے علاوہ دس لاکھ روپے کی مالی معاونت فراہم کی جائے گی۔معاون خصوصی نے مرحوم کے بھائی کو سرکاری ملازمت کی پیش کش بھی کی۔معاون خصوصی نے کہا کہ ماجد کا جرم یہ تھا کہ وہ پی ٹی آئی کا ورکر تھا۔

ہر کسی کو اپنی رائے کے اظہار کا حق حاصل ہے۔ مگرطاقت کے نشے میں اسلحہ کے زور پر اظہار رائے کا حق چھینے کی کوشش کی گئی۔ انہوں نے کہا کہ مریم نواز کو سٹیج پر کھڑے ہو کر اس قتل کی مذمت کرنی چاہئے تھی۔ مریم بی بی نے مرحوم کے لواحقین کے زخموں پر نمک پاشی کی۔پی ٹی آئی انصاف کے بول بالا کرنے کیلئے نکلی ہے۔

ہم نے غنڈہ گردی کی سیاست کو جڑ سے اکھاڑنا ہے۔عوام نے حوصلہ سے ڈسکہ میں گدی نشینی اور جان نشینی کی سیاست کا خاتمہ کیا، انہوں نے کہا کہ تحریک انصاف کے کارکنان کو حراساں کرنے کیلئے پورے پنجاب سے غنڈے بلائے گئے۔