حسان خاور

پی ڈی ایم پھنس چکی، بھاگنے کا راستہ ڈھونڈ رہی ہے، حسان خاور

لاہور( لاہورنامہ)معاون خصوصی وزیر اعلی پنجاب حسان خاور نے کہا ہے کہ تحریک انصاف کی حکومت زیادہ بارش ہوتی ہے تو زیادہ پانی آتا ہے کے نعرے پر یقین نہیں رکھتی۔ حکومت اس بات پر یقین رکھتی ہے کہ زیادہ پانی آئے تو یہ حکومت کی ذمہ داری ہے کہ اس کی نکاسی کا انتظام کیا جائے۔

رین واٹر سٹوریج ٹینک
لاہور میں 9 ایسے مقامات پر رین واٹر سٹوریج ٹینک بنائے جا رہے ہیں جہاں بارشی پانی بہت زیادہ کھڑا ہوتا تھا

انہوں نے کہا کہ سابق وزیر اعلی نے بارشوں کے پانی میں کھڑے ہو کر فوٹو سیشن پر زور دیا۔ گذشتہ پچاس سالوں سے گورننس کا ماڈل یہ تھا کہ مسائل پر محض سیاست کی جاتی رہی مگر ان کا حل نہیں نکالا گیا۔ تحریک انصاف کی حکومت نے اس تسلسل کو توڑا اور فلاحی ترقیاتی منصوبے شروع کئے۔ انہوں نے کہا کہ عثمان بزدار کی ہدایت پر لاہور میں 9 ایسے مقامات پر رین واٹر سٹوریج ٹینک بنائے جا رہے ہیں جہاں بارشی پانی بہت زیادہ کھڑا ہوتا تھا۔

یہ منصوبے آئندہ سال فروری اور مارچ کے درمیان مکمل ہو جائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ پی ڈی ایم بھان متی کا کنبہ ہے۔ اسے عوامی مفادات سے کچھ لینا دینا نہیں۔ پی ڈی ایم نے گزشتہ سال بھی نومبر میں اعلان کیا تھا کہ جنوری تک حکومت ختم ہو جائے گی۔ لیکن جنوری گزرے بھی کئی ماہ ہو چکے حکومت بدستور موجود ہے۔ حسان خاور نے مزید کہا کہ پی ڈی ایم کی کشتی میں سب نے کئی چھوٹے چھوٹے سوراخ کر رکھے ہیں۔ یہ کشتی ڈوب رہی ہے لیکن اس کشتی کے مسافر اسی بحث میں الجھے ہوئے ہیں کہ کس نے چھوٹا سوراخ کیا کس نے بڑا؟۔

انہوں نے کہا کہ پی ڈی ایم نے لانگ مارچ کی تاریخ شرمندگی چھپانے کیلئے دی۔ تاریخ پر تاریخ دے کر پی ڈی ایم بھاگنے کا راستہ تلاش کر رہی ہے۔ حسان خاور نے کہا کہ پی ڈی ایم کی 23 مارچ کی لانگ مارچ کی تاریخ کو سنجیدگی سے نہ لیا جائے۔ ان کے پرانے وعدے ہی ان کی سنجیدگی کا ریکارڈ ہیں۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کو مہنگائی اور عام آدمی کا احساس ہے۔ اسی لئے 120 ارب کی لاگت سے احساس راشن پروگرام شروع کیا گیا ہے۔

یہ پروگرام اس لحاظ سے بھی مثالی ہوگا کہ مختلف اشیا پر 30 فیصد سبسڈی حاصل ہوگی جبکہ اس پروگرام کے اثرات شفاف طریقے سے لوگوں تک پہنچیں گے۔ انہوں نے کہا کہ آئی ایم پروگرام کڑوی گولی ہے جو پاکستان جیسے ہر ملک کو بہرحال نگلنی ہے۔ مشکل فیصلے کرنا ضروری ہیں تاکہ آنے والی نسلیں آئی ایم ایف ہر انحصار نہ کریں۔ ایک سوال پر انہوں نے کہا کہ اگر پی ڈی ایم حکومت سے اجازت لے کر اور قوانین و ضوابط کے مطابق لانگ مارچ کرے گی تو ہم اسے راستہ دیں گے۔ انہوں نے کہا کہ پی ڈی ایم مارچ نہ انتظار نہ کرے آج سے ہی لانگ مارچ شروع کر دے۔